Archive for May, 2016

ترقی کا واحد ذریعہ:تحریر  رانا ساجد سہیل

ترقی کا واحد ذریعہ:تحریر رانا ساجد سہیل

پڑھ اپنے رب کے نام سے جس نے پیدا کیا انسان کوجمے ہوئے خون کے لوتھڑے سے۔پڑھو تمہارا رب بڑا کریم ہے جس نے قلم کے ذریعے علم سکھیا یا انسان کو جو وہ نہیں جانتا تھا۔
برطانیہ میں ہر گھر میں تیز ترین انٹرنیٹ موجود ہے لوگوں کے پاس سمارٹ فونز بھی ہیں جو آج کل کمپیوٹرز اور لیب ٹاپ کا کام دیتے ہیں ہر شخص گھر میں، کام پہ اور سفر کے دوران ہر کہیں آتے جاتے پوری دنیا سے رابطہ میں ہوتا ہے اور آج کل سوشل میڈیا اور انٹر نیٹ کا دور ہے آپ کو کوئی بھی معلومات چاہیے ہو آپ منٹوں میں بیٹھے بٹھا ئے نکال لیتے ہیں حتی کہ تقریبا ہر طرح کی کتب بھی آن لائن پڑھنے کے لئے مل جاتی ہیں لیکن پھر بھی برطانیہ کے ہر چھوٹے بڑے ٹاوُ ن میں ایک لا ئیبریری موجود ہے جس میں سینکڑوں یا ہزاروں کی […]

جیت سیمنٹ اور سریے کی ہی ہوئی: روُف کلاسرا

جیت سیمنٹ اور سریے کی ہی ہوئی: روُف کلاسرا

وفاقی حکومت کے ادارے محکمہ شماریات کی رپورٹ پڑھتے ہوئے اپنے پرانے مرحوم دوست ڈاکٹر ظفر الطاف بہت یاد آئے۔ کسانوں کی ایک ہی آواز تھی جو پچھلے سال ہمیشہ کے لیے خاموش ہو گئی۔ مجھے اندازہ ہے‘ اگر وہ زندہ ہوتے تو اس رپورٹ کو پڑھ کر کتنے افسردہ ہوتے‘ جو شماریات ڈویژن نے اب جاری کی ہے۔ مجھے تو اپنی آنکھوں پر اعتبار ہی نہیں آ رہا کہ واقعی وہی پڑھ رہا ہوں جو لکھا ہوا ہے یا پھر یہ کوئی دھوکا ہے۔ ڈاکٹر ظفر الطاف سے زیادہ کسانوں سے محبت کرتے میں نے بہت کم لوگوں کو دیکھا ہے۔ میں انہیں کسانوں کے لیے تڑپتے دیکھا۔ ہم تو چلیں صحافی، کالم نگار لوگ بات کرکے ٹل جاتے ہیں، ظفر الطاف باقاعدہ طاقتور لوگوں سے لڑتے‘ اور اس کی سزا بھی پاتے۔ جب وہ فوت ہوئے تو بھی ان کے خلاف چند مقدمات چل رہے تھے کیونکہ وہ […]

سچ نہیں بول سکتے تو خاموش رہیں: نصرت جاوید

سچ نہیں بول سکتے تو خاموش رہیں: نصرت جاوید

پاکستان سے ہزاروں میل دور کئی سمندروں کے پار ایک ملک ہے ۔امریکہ اس کا نام ہے۔ ان دنوں اس کا صدر بارک اوبامہ نام کا ایک شخص ہے۔ چند روز قبل اس نے اپنی فوج کو تحریری طورپرحکم دیا کہ افغان طالبان کے امیر ملا اختر منصور کا سراغ لگاکر اسے قتل کردیا جائے۔ ڈرون طیاروں کے ذریعے کسی شخص کی ہلاکت کے لئے ایسا حکم عموماََامریکی سی آئی اے کے لئے جاری ہوتا ہے۔ ملااختر منصور کے ضمن میں یہ حکم پوری امریکی وزارتِ دفاع کو دیا گیا۔
ریاستی فرائض اور شہری حقوق سے قطعی ناآشنا اور تحریری آئین وقانون کے تقاضوں کو کبھی خاطر میں نہ لانے والے ہمارے سیاسی اور دوسری نوعیت کے حکمران اور اشرافیہ نے ابھی تک اس پہلو پر غور ہی نہیں کیا کہ ملامنصور کی ہلاکت کا حکم امریکی سی آئی اے کے بجائے وزارتِ دفاع کو کیوں دیا گیا۔ اس اشرافیہ کی […]

یومِ تکبیر تک کا سفر۔۔ تحقیق و تحریر: حسیب اعجاز عاشرؔ

یومِ تکبیر تک کا سفر۔۔ تحقیق و تحریر: حسیب اعجاز عاشرؔ

قوم کی بے چینی، اضطرابی ،ہاراورجیت،زندگی اور موت کی کشمکش نے دم توڑا جب ۲۸ مئی کو پُرسکون جگمگاتے دن کا آغاز نئی جیت اور نئی زندگی کیساتھ ہوا، سورج ڈھلنے سے پہلے دنیا پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع چاغی کے سیاہ و سنگلاخ پہاڑوں کو پیلے زرد رنگوں میں نکھرتے ،بکھرتے اور اُڑتے دیکھ رہی تھی اور فضاتکبیر کے فلک شگاف نعروں سے گونج رہا تھا،ایک کمسن کی رگوں میں بھی خون جوش مار رہا تھااورتن بدن کی گرمائش سے اُسکا چہرہ بھی سرخ گلابی ہو رہا تھا،آنکھیں نم تھیں اور لبوں پے بے ساختہ اللہ اکبر اللہ اکبر کا وردبھی جاری تھا، عجب سی کیفیت تھی،یہ فطری جذبہ حب الوطنی ہی تھی ورنہ آٹھ سال کے بچے کو وطن اور اِس سے محبت اور پھر محبت میں ایسی شدت کی کیا خبر؟۔۔۔۔۔۔نعرہ تکبیر’’اللہ اکبر‘‘ کی روح پرور صدائیں میری سماعتوں سے مدھم ہونے کو نہ تھی شاید […]

یہ کس شاہ کی آمد ہے کہ رن کا نپ رہا ہے

یہ کس شاہ کی آمد ہے کہ رن کا نپ رہا ہے

اول الکلا م تو شاعر سے معذرت کے ساتھ ہم بلا اجازت جرم تخفیفِ شعر کے مرتکب ہوئے ۔دوسرا اصل میں شعر کچھ یوں ہے
کس شیر کی آمد ہے کہ رن کانپ رہا ہے
رن ایک طرف چرخ کہن کانپ رہا ہے
بات کچھ یوں ہے عثمان نیاز ۔ز وہیب گوندل اور نعمان جاوید کے ہمراہ قافلہ ء شوق ارباب فہم دودانش کی آماجگاہ پاک ٹی ہاؤس کی جانب خراماں خراماں رواں تھا ۔ حسب سابق راستے بھر کارل مارکس جالب و فیض اقبال کے نظریات و افکار پر دھواں دھار گفتگو کرتے منزل پر پہنچے ۔ پاک ٹی ہاؤس میں پہنچ کر آج بھی یوں لگ رہا تھا جیسے وہ سامنے فیض احمد فض سگریٹ سلگائے بیٹھے ہوں اور کہیں سے ساغر پرانابوسیدہ لباس پہنے نکل آیا ہو ۔ اور کہیں ساتھ ٹیبل پرمنیر نیازی اور احمد ندیم قاسمی کے لمس کی خوشبو آرہی ہو اور اہل فکر وذوق کی محفل […]

دیکھتا کیا ہے مرے منہ کی طرف: اظہار الحق

دیکھتا کیا ہے مرے منہ کی طرف: اظہار الحق

 
وسطی بھارت کا کوئی شہر تھا۔ وزیراعظم مودی تقریر کر رہا تھا۔ ایک لمحہ کے لیے مسلسل بدلتے چینل روک دیئے۔ ہاتھ جوڑ کر عوام سے درخواست کر رہا تھا کہ بھگوان کا واسطہ ہے، صفائی کا خیال رکھو،کوڑا ہر جگہ نہ پھینکو، وہاںپھینکو جہاں پھینکنے کی جگہ ہے۔ گلیاں صاف ہوں گی، شاہراہیں صاف ہوں گی تو شہر بھی صاف ستھرے ہوں گے۔
مہینوں گزر گئے یہ تقریر، یہ منت سماجت، عوام کے سامنے ہاتھ جوڑنا، عرض گزاری کرنا، بھولتا نہیں! مسلمانوں کا دشمن ہے پاکستان کا ویری ہے۔ گجرات میں ہزاروںکلمہ گوئوں کو شہید کرایا۔ گھر اُجڑ گئے، آر ایس ایس کا کٹر پیروکار ہے۔ مگر جہاں تک بھارت کا تعلق ہے وژن رکھتا ہے۔ کچھ کرنا چاہتا ہے۔ گجرات کی معاشی حوالے سے حالت بدل ڈالی۔ وزیراعظم بننے کے بعد جس تیزی سے ملک ملک گیا، بھارت کے معاملات پر بات چیت کی، دفاعی پیداوار کے منصوبوں میںدلچسپی […]

فیصلہ کن مرحلہ: ہارون الرشید

فیصلہ کن مرحلہ: ہارون الرشید

سب سے اہم یہ جناب کپتان! انتقام نہیں قصاص، استعفیٰ نہیں احتساب، جوش و جنون نہیں، حکمت و تدبیر، حکمت و تدبیر جناب والا! فیصلہ کن مرحلہ آ پہنچا۔
اپوزیشن نے بائیکاٹ کیوں کیا؟ سوچا، شاید کوئی حکمتِ عملی ہو۔ ممکن ہے کہ وہ پارلیمنٹ کا بائیکاٹ کر دیں اور عوام کے سامنے جانے کا فیصلہ کریں۔ ایسا تو کچھ نہیں ہوا۔ کوئی گھٹا نہیں اُٹھی کہ ابر برسے۔ اجلاس میں شریک لوگوں سے پوچھا تو کوئی معقول جواب نہ ملا۔
پہلی بات تو یہ ہے کہ تحریک انصاف، شیخ رشید اور چوہدری پرویز الٰہی سمیت سب لوگ اس اقدام میں شریک تھے۔ تنہا پیپلز پارٹی ذمہ دار نہیں۔ ذہنی افلاس کا مظاہرہ یا بے دلی کا؟ کیا ان کا خیال یہ تھا کہ اگر عمران خان کو موقع ملا تو وہ لیڈر بن کر ابھرے گا؟ اعتزاز احسن کے ہاں اپوزیشن کے اجلاسوں میں امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے […]

مطیع الرحمان نظامی معاف کر نا

مطیع الرحمان نظامی معاف کر نا

ابھی سو شل میڈیا پہ ایک تصویر نظر سے گزر ی اور پھر نظر ہی اس پہ جم گئی نظر کے رستے دل میں اتر گئی دل میں خیال آیا اس نورانی وجدانی صورت چہرے پہ ہلکی مسکراہٹ سراپا انوار وتجلیات میں ڈوبا ہوا سفید لباس میں یہ دمکتا پرنور چہر ہ اور اس چہرے پہ خاتم الانبیاء ﷺ کی سُنت گویا کہ تصویر نے دل موہ لیا کہ سفر آخرت اور اس قدر اطمینان او ر سکون گو یا کہ ابھی سوئے ہوں چند لمحوں بعد پھر اٹھیں گے اور قال اللہ قال رسو ل اللہ کی صدا لگائیں گے۔ ابھی تصویر کے سحر میں ہی مسحور تھا کہ برادر محترم بلال لطیف کی کال نے یکسوئی اور تسلسل توڑا اورلائن پہ آتے ہی بولے ۔ انا للہ واناالیہ راجعون ، جماعت اسلامی بنگلہ دیش کے امیر مطیع الرحمٰن نظامی کو گزشتہ رات بھارت نواز حسینہ واجد کی کٹھ […]

وقت کے حکمراں کے سامنے کلمہ حق کہنا

وقت کے حکمراں کے سامنے کلمہ حق کہنا

دربار کھچا کھچ درباریوں سے بھرا ہوا تھا بادشاہ سلامت اکثر سیروسیاحت پر رہتے اور طویل عرصے کے بعد رو افروز ہوئےتھے درباریوں اور خوشامدیوں نے بادشاہ کے حق میں نعرے بلند کئے درباری ، بھانڈ اور مسخرے اپنی باتوں اور حرکتوں سے بادشاہ کا دل خوش کرنے کی کوشش کر رہے تھے آپکو لگتا ہو گا کہ میں شائد شاہی سلطنت پاکستان کے مغل بادشاہ میاں محمد نواز شریف کے دربار عالیہ المعروف قومی اسمبلی پاکستا ن کی بات کر رہا ہو کیونکہ کل قومی اسمبلی میں جو ہوا وہ اسی کی عکاسی کرتا ہے لیکن یہ کہانی تو پرانے وقت کے کسی بادشاہ کی ہے ۔
جب یہ سب مسخرہ پن ختم ہوا تو ایک باغی نوجوان کو دربار میں پیش کیا گیا اور فرد جرم عائد کی گئی کہ یہ رعایا کو ریاست کے خلاف بھڑکا رہا ہے اور انکے دل میں نفرت پیدا کر رہا ہے کھلم […]

پھو ل بادل کے گرجنے سے نہیں برسنے سے اگتے ہیں

پھو ل بادل کے گرجنے سے نہیں برسنے سے اگتے ہیں

جلا لدین رومی کا کہنا تھا کہ” اپنی آ واز کی بجائے اپنے دلائل کو بلند کریں ، پھو ل بادل کے گرجنے سے نہیں برسنے سے اگتے ہیں” ۔
میا ں نواز شریف پہلے دو بار بھی وزیر اعظم رہ چکے ہیں لیکن وہ کبھی بھی اپنی مدت حکومت پوری نہ کر سکے اور تیسری بار بھی ان کے ساتھ وہی کچھ ہو نے جا رہا ہے کیوں کہ میاں صاحب تدبیر سے زیادہ تذلیل سے کام لینے کی سوچتے ہیں انکو محسوس ہوتا تھا کہ پہلے انھوں نے اپنے ساتھیوں کی باتوں میں آ کر غلط اقدام اٹھائے جس کے نتیجے میں انھیں وزیر اعظم ہاوٗ س سے جیل کی کال کو ٹھڈی میں جا نا پڑا اس لئے شریف فیملی ( نواز ) نے اس بار فیصلہ کیا ہے کہ جو بھی کرے گے اب صرف اپنے خاندان کے چند لوگوں سے ہی مشورہ کرے گے جس میں […]

advertise