Rana S Sohail

اب کیا ہو گا

اب کیا ہو گا

وطن عزیز میں اتنے مسائل اور واقعات پیدا ہوتے ہیں کہ بند ہ ہر صبح اٹھ کر سوچتا ہے کہ اب کیا ہو گا ابھی دن گزرتے ہی رات کو سونے
سے پہلے پھر یہی سو چتا ہے کہ پتہ نہیں اب رات کو کیا ہو نے والا ہے ہو سکتا ہے جب صبح آنکھ کھلے تو حالات کچھ اور ہی ہو۔غریب آدمی کو یہ سوچ کر نیند نہیں آتی کہ صبح اٹھ کر وہ کام کہا ں کرے گا تاکہ اپنے بیوی بچوں یا بہن بھائیوں کے لئے روٹی روزی کا بندوبست کر سکے اور اس کے بر عکس امیر آدمی کو نیند کی گو لیاں کھا کر سونا پڑتا ہے کیو نکہ اس کی زندگی سے شائد سکون جیسے ختم ہی ہو گیا ہواس کی بھی وجہ ہےکہ جب ہم ٹیکس ادا نہیں کرے گے زکو ۃ نہیں دے گے تو آپ کو سکون سے نیند کیسے آئے گی،کرپشن […]

نعرہ بازی کمزور لوگوں کا شیوہ

نعرہ بازی کمزور لوگوں کا شیوہ

جاپان دنیا کا واحد ملک ہے جس پر امریکہ نے ایٹم بم گرایا اس لحاظ سے امریکہ جاپان کا بد ترین دشمن ہونا چاہیے لیکن جاپان میں لوگ امریکہ مردہ باد یا مرگ بر آمریکہ کیو ں نہیں کہتے یہ ایک ایسا سوال ہے جس پر ہمیں غور کرنا چاہیے ۔ کسی نے جاپانی شہری سے پوچھا تھا کہ آپ امریکہ کے خلاف نعرہ بازی کیوں نہیں کرتے جس پر اس شخص نے مسکراہ کر جواب دیا کہ نعرہ بازی کمزور لوگوں کا شیوہ ہے جو عملا کچھ نہیں کر سکتے آج امریکی صدر کے دفتر میں پینا سونک کی ٹیلیفون اور سونی کا ٹیلی ویژن رکھا ہو گا جو کہ جاپان کے بنے ہوئے ہیں یہی ہماری جیت ہے اور یہی ہمارا بدلہ ہے۔
اسی طرح چین کے بانی موزے تن نے جب چین کی ترقی کی بنیاد رکھی تو اس وقت چین کے لوگ ان پڑھ اور نہایت ہی […]

چائے کی پیالی

چائے کی پیالی

ہم سب کے بہت سے دوست احباب ہوتے ہیں ان میں اکثر سیاسی جماعتوں سے تعلق رکھنے والے اور مختلف نظریات کے قائل لوگ بھی ضرور ہوتے ہیں لیکن ہم پھر بھی انکی غمی خوشی میں بھی شریک ہوتے ہیں بلکہ پاکستان میں بہت سے سرمایہ دار جو کہ سیاسی جماعتوں پر قابض ہیں ان میں بہت سے لوگ آپ کو ایسے بھی ملے گے جو مختلف سیاسی جماعتوں سے نہ صرف تعلق رکھتے ہو گے بلکہ انکے پاس جماعت کا کوئی بڑا عہدہ بھی ہو گا لیکن پھر بھی وہ ایک دوسرے سے نہ صرف ملے گے بلکہ کاروبار اور رشتہ داریاں بھی کرے گے۔
اس کے بر عکس مقامی سطح پر کارکنان کو آپس میں لڑوایا جاتا ہے نفرت میں لوگوں کی زندگیاں تباہ و برباد ہو جاتی ہیں اور دشمنی نسل در نسل بھی چلنا شروع ہو جاتی ہے ۔اور اگر کوئی درمیانے طبقے سے تعلق رکھنے والا […]

آزادی یا منافقت

آزادی یا منافقت

حدیث مبارکہ ہے کہ ماں باپ زندہ ہوں تو انکی خدمت کرنا افضل ترین جہاد ہے ۔صحیح بخاری
بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح نے کہا تھا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے کہنے کو تو یہ فقط ایک چھوٹا سا جملہ ہے لیکن اس کے اندر ایک بڑی داستان چھپی ہے آخر کوئی تو وجہ ہو گی کہ قائد اعظم نے کشمیر کو پاکستان کا اتنا ضروری اور اہم حصہ قرار دیا کیونکہ اگر آپ کسی کی شہہ رگ کاٹ دے تو وہ زندہ نہیں رہ سکتا ۔ شائد یہی وجہ ہے کہ پاکستان کی شہہ رگ پر ہندوستان کا قبضہ ہے جس کو وہ کاٹنے کی مسلسل کوشش میں لگا ہوا ہے۔لیکن پاکستان ابھی بھی زندہ ہے اس کی وجہ یہ بھی ہو سکتی ہے کہ شائد قائد اعظم نے کبھی ایسا کچھ کہا ہی نہ ہو کیونکہ ہم خود بھی اپنی من پسند کہانیاں بنا لیتے […]

ادبی ریاست کا بادشاہ : جمیل الدین عالی

ادبی ریاست کا بادشاہ : جمیل الدین عالی

عالی جی اب آپ چلو تم اپنے بوجھ اٹھائے
ساتھ بھی دے تو آخر کوئی کہا ں تک جائے
جس سورج کی آس لگی ہے شائد وہ بھی آئے
تم یہ کہو خود تم نے اب تک کتنے دئے جلائے
آج پہلی بار لکھتے ہوئے الفاظ کے چناؤمیں احتیاط سے کام لینا پڑ رہا ہے اور ایک ایک لفظ سوچ سمجھ کے لکھ رہا ہوں ۔  فخر بھی محسوس ہو رہا ہے کہ معمولی سا کالم نویس ہوں اور جن کے بارے میں لکھ رہا ہوں وہ علم و ادب کے ہیرو ہیں اور کالم نویسی ، اردو ادب اور ثقافت کے فروغ کے لئے انکی بڑی خدمات ہیں  جن کا نام جمیل الدین عالی ہے ۔
انکی پیدائش 20 جنوری 1926 کو ہندوستان کے شہر دہلی میں سر امیر الدین احمد کے ایک ادبی گھرانے میں ہوئی ۔ جمیل الدین عالی کا پورا نام نواب زادہ مرزا جمیل الدین احمد خاں تھا اور عالی […]

بادشاہ کا خون بھی ہمارے جیسا نمکین ہی ہے

بادشاہ کا خون بھی ہمارے جیسا نمکین ہی ہے

 
جب سے فرانس پر حملہ ہوا ہے تب سے پوری دنیا خاص طور پر یورپ اور مغرب میں ایک نئی بحث کا آغاز ہو گیا ہے اسکے ساتھ ساتھ شامی بے گناہ پناہ غزینوں اور یورپ، برطانیہ اور امریکہ میں رہنے والے مسلمانوں کے لئے بھی مشکلات میں اضافہ ہو آ ہے ۔
فرانس میں دہشت گردی کے واقعات کے بعد پورے مغرب میں پریشانی کا عالم ہے اور لوگ تذبذب کا شکار ہیں اسکے بعد روس ، فرانس اور امریکہ کی طرف سے شام پر بلا خوف و خطر بمباری میں اضافہ کر دیا گیا جس کی وجہ سے روزانہ سینکڑوں بے گناہ بچے، بوڑھے اور عورتوں کو موت کے گھاٹ اتارا جا رہا ہے ۔ مغربی میڈیا اور حکمرانوں کی طرف سے یہ تاثر دیا جا رہا ہے کہ ہم دولت اسلامیہ کی نام نہاد دہشت گرد تنظیم پر چڑ دوڑے ہیں اب اس کے خاتمے تک اس کا […]

چند یادگار لمحے

چند یادگار لمحے

کچھ دن پہلے ہم دوستوں نے مل کر ایک دن کہیں باہر جا کر گزارنے کا پروگرام بنایا اور برائٹن سے کوئی لگ بھگ پندرہ میل
آگے سیون سسٹر کلفز نامی جگہ کا تعین کیا گیا اور اسکے بعد انتظامات کرنا شروع کر دیئے کیو نکہ پروگرام یہی تھا کہ صبح سویرے نکلے گے اور رات کو واپس آئے گے اب تیس دوستوں نے جانا تھا تو اور سارا دن گزارنے کے لئے کھانے پینے کا انتظام بھی بہت ضروری تھا اور یہ ذمہ داری نعیم الفت کے سر تھی وہ دوسرے لوگوں سے بھی مدد لے سکتا تھا جس میں زاہد آفریدی ،رومی ملک اور ساج بٹ نے بھی کافی مدد کی۔پروگرام بناتے اور جگہ کا تعین کرتے وقت اس بات کو مد نظر رکھا گیا تھا کہ ہمیں ایک لمبے رستے پر پیدل چلنا ہے اور ظاہر ہے راستہ خوبصورت ہو تو ہی آپ لطف اندوز ہو سکتے ہیں […]

جوڈیشل کمیشن

جوڈیشل کمیشن

پاکستان میں ہمیشہ کہا جاتا ہے کہ انتخابات میں دھاندلی ہو ئی مختلف ادوار میں ہر وہ جماعت جو انتخابات ہار جاتی وہ یہی کہتی کہ ہمیں دھاندلی کے ذریعے ہرایا گیا ہے اور کچھ دن شور
بھی مچاتی اور پھر کچھ دن کے بعد سب بھول جاتے کہ انتخابات میں کس کے ساتھ کیا ہوا ۔اسی طرح پچھلے عام انتخابات میں بھی تقریبا تما م جماعتو ں نے مختلف طریقوں سے مختلف جماعتوں پر دھاندلی کے الزامات لگائے ۔کسی نے کہا کہ سندھ میں ان کے ساتھ دھاندلی ہو ئی تو کسی نے خیبرپختونخواہ ،کسی نے بلوچستان اور کسی نے کہا کہ پاکستان کے سب سے
بڑے صوبے پنجاب میں انکو دھاندلی کے ذریعے ہرایا گیا۔ لیکن اس بار انتخابات کے بعد پاکستان تحریک انصاف نے بہت زور شور سے انتخابات میں دھاندلی پر شور مچایا اور پھر عمران خان نے چار حلقوں کی تحقیق کا مطالبہ کیا اور تحریک انصاف […]

لاہور سے لندن

لاہور سے لندن

آج کل پاکستان میں ایک بار پھر سیاسی سرگرمیاں زورو شور پر ہیں قومی اسمبلی کے کچھ حلقوں پر دوبارہ الیکشن ہو رہا ہے جس میں سب سے اہم حلقہ سابقہ سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کا ہے اور پھر ہے بھی لاہور میں کیو نکہ کہا جاتا ہے لاہور پاکستان اور بالخصوص پنجاب کی سیاست کا دل ہے اور اگلے مہینے بلدیاتی انتخابات بھی ہو رہے ہے کچھ یہ بھی وجہ ہے کہ انتخابی مہم میں زیادہ ہی تیزی ہے اور مقابلہ تحریک انصاف اور مسلم لیگ ن میں ہے پیپلز پارٹی جو ایک وقت میں وفاق کی علامت سمجھی جاتی تھی بد قسمتی سے اندرون سندھ تک محدود ہو کر رہ گئی ہے ویسے بھی اگر آپ دنیا کے کسی بھی ملک میں دیکھ لیں یہ انسانی تاریخ ہے کہ لو گ پہلی دو بڑی جماعتوں کی طرف ہی دیکھتے ہیں باقی کچھ چھوٹی
چھو ٹی جماعتیں ضرور ہو […]

سیاست کے دو مختلف انداز

سیاست کے دو مختلف انداز

کل جب لاہور ایک بار پھر سیاسی سر گرمیوں کا مرکز بنا ہوا تھا تو سوچا کہ کچھ خبریں ہی دیکھ لیتا ہو جیسے ہی ٹی وی آن کیا تو نیوز چینل پر آدھی آدھی سکرین پر دونوں جماعتوں کے جلسوں کا منظر نامہ دیکھایا جا رہا تھا چند منٹ کے بعد اشتہارات شروع ہو گئے اور اشتہارات دیکھ کر مجھے لگا کہ شائد ملک میں عام انتخابات شروع ہو گئے ہیں کیونکہ عام انتخاب کی طرع پھر سے ایک بار مسلم لیگ ن کی اشتہاری مہم کا آغاز ہو چکا تھا اور موضوع تھا سیاست کے دو مختلف انداز ایک دوسرے کے آمنے سامنے جس میں دونوں جماعتوں کے رہنماؤں کی تصویریں دیکھائی جا رہی تھی پہلے لاہور کے حلقہ سے ہی شروع کر لیتے ہیں ایک طرف ایاز صادق جو کہ دو سال سے زیادہ عرصے تک دھاندلی سے جیت کر عوام کے پیسے پر آیا شی کرتا […]

advertise